واپس چلیں   پاکستان کی آواز > اردو ادب اورشاعری > اردو ادب سے اقتباسات > اردو افسانے




مدر ڈے ۔۔۔۔ میں ایک عورت ایک ماں

short url
جواب
 
LinkBack موضوع کے اختیارات موضوع کی درجہ بندی ظاہری انداز
پرانا 10-05-10, 03:59 AM   #1
Senior Member
 
تاریخ شمولیت: Sep 2008
مراسلات: 1,307
کمائي: 38,570
شکریہ: 245
1,036 مراسلہ میں 3,136 بارشکریہ ادا کیا گیا
Default مدر ڈے ۔۔۔۔ میں ایک عورت ایک ماں

مدر ڈے ۔۔۔۔ میں ایک عورت ایک ماں

نرس نے ایک ننھا سا وجود میری گود میں ڈالا میں حیرت سے اسے دیکھ رھی تھی وہ میرے وجود کا حصہ تھا میں اٹھارہ برس کی ھوئ تھی کل تک ایک بیٹی تھی ایک لاپروہ سست نکمی کام چور سوتی صورت جس کو ھر روز ایک نیا نام ملتا تھا اپنی ماں کی ایک نکمی بیٹی آج خود ایک بیٹی کی ماں بن گئ تھی میں نے اس ننھے سے وجود کو دیکھا وہ آنکھیں بند کیے دھیرے سے مسکرایا میرے لب اپنے آپ مسکرا دئیے میں نے اس کا گالوں کو چھوا بانھوں میں بھر کر اپنے قریب کیا تو لگا ساری کائنات میری آغوش میں آگئ ھے آج مجھے ایک نیا روپ ملا تھا آج میں بیٹی بہو بیوی کے بعد ایک عظیم رتبہ ملا تھا آج میں ایک ماں تھی
میری امی کہتی تھیں میں مردوں سے شرط لگا کر سوتی ھوں میرے بھائ کا خیال تھا قیامت کے دن جب صور پھونکی جائے گی جو سب سے آخر میں انسان اٹھے گا وہ میں ھونگی اب یہ حال تھا عائشہ رات کو دو بجے دودھ پینے کے لیے اٹھتی تھی اور میں اس سے پہلے جاگی ھوتی تھی اپنی امی کو گھر اگر واش بیکن صاف کرنا پڑ جاتا تو ایسے لگتا جیسے پتا نہیں کتنی گندگی صاف کرنی پڑ رھی ھے ھزار بہانے بناتی اور اب اپنی بیٹی کی نیپی آرام سے صاف کرتی تھی
مجھے اپنے ناخن بہت عزیز تھے کوئ ایسا کام نہیں کرتی تھی جس سے میرے ناخن خراب ھوں اب میں نے خاموشی سے کاٹ دئے تھے نیپی بدلتے ھوئے کہیں اسے لگ نہ جائیں میری نیند اب کہیں کھو گئ تھی وہ سوتی تو جلدی جلدی گھر کے کام کرتی وہ جاگتی تو بس وہ ھوتی اس کی ایک ایک بات مجھے یاد ھے اس کا ھنسنا اس کا رونا ریڑھنا چلنا بولنا پہلی بار ماں کہنا عائشہ کے بعد علی عمر اور پھر فاطمہ اس میں اتنی مصروف ھو گئ کہ میری ذات کہیں کھو گئ
شاپنگ کرنے جاتی جوتے کپڑے پسند کرتی بچوں کو کوئ چیز پسند آجاتی اپنی پسند کی چیز خاموشی سے رکھ دیتی بچوں کی خواہش پورا ھونے پہ جو مسکرائٹ ان کے چہرے پہ آتی اسے دیکھ کر خوش ھو جاتی ان کی خوشی دیکھ کر اپنی تکلیف بھول جاتی اور ان کی تکلیف میں اپنا آرام بھول جاتی ان کی خوشیاں ان کی خوائشیں ان کے خواب ان کی تعلیم ان کا مستقبل زندگی ان کے ساتھ بھاگتے بھاگتے بھاگ رھی تھی اس کا شاید مجھے بھی احساس نہیں ھوا تھا احساس تب ھوا جب عائشہ کا رشتہ آیا کیا وقت اتنا گزر گیا ھے میں نے حیرت سے عائشہ کو دیکھا رشتہ اچھا تھا میرے بھائ کا بیٹا تھا اور عائشہ کی پسند بھی اس کی شادی کے بعد علی کو امریکن یونیورسٹی میں ایڈمیشن مل گیا وہ گیا کچھ عرصے بعد فاطمہ کی شادی ھو گئ عمر کی تعلیم مکلمل ھوئ اس نے پاکستان میں ھی جاب کو ترجیح دی اگر وہ بھی علی کی طرح پاکستان جیسے غریب ملک کو چھوڑ کر جانا چاھتا توھم کیا کر لیتے
اس کی شادی اس کے دوست کی بہن سے ھوئ میری مصروفیات اب صرف بچوں کے فون کا انتظار تھا کب علی فون کرے گا کب عائشہ کا فون آئے گا اکثر میں ھی فون کرتی تھی فاطمہ اسی شہر میں تھی وہ مہینے کے بعد ملنے آتی تھی اس کے سسرال والوں کو اس کا بھاگ بھاگ کر میکے آنا پسند نہیں تھا میں نے اسے منع کر دیے تھے فون کر لیا کرو بد مزگی سے کیا فائدہ بہت بار سوچا اس کے شوہر سے پوچھوں کیا شادی کے بعد بیٹی کا رشتہ اپنے گھر والوں سے ختم ھو جاتا ھے
جو ماں پیدا کرتی ھے پالتی ھے اسے انسان بناتی ھے زندگی گزارنے کا ڈھنگ سکھاتی ھے جنت ماں کے قدموں تلے ھوتی ھے چاھے بیٹا ھو یا بیٹی خدمت دونوں پہ فرض ھے شادی کے بعد بیٹی کی جنت ساس کے قدموں میں نہیں آجاتی ساس کی خدمت بہو پہ فرض ھوتی ھے بیٹی کی ماں بھی تو ساس ھوتی ھے تو کیا داماد اور اس کے گھر والوں پہ اس کا احترام فرض نہیں ھوتا کیا بیٹے کی ماں کا رتبہ بلند ھوتا ھے کیا بیٹی کی ماں بننے سے عورت کی عزت کم ھو جاتی ھے مگر بہت سی باتوں کے ساتھ یہ سب باتیں بھی میرے دل کے قبرستان میں دفن ھو گئیں تھیں
آج عمر نے مجھے کہا یہ علاقہ پرانا ھے یہاں اچھے اسکول نہیں اگر اچھے اسکولوں میں بچوں کو داخل کروائے تو بچوں کا آدھا دن آنے جانے میں ضائع ھو جائے گا اس لیے وہ چاھتا ھے کسی اچھے علاقے میں‌گھر لے لے میں نے اسے کہا وہ جہاں چاھے جا سکتا ھے مگر اس گھر کو چھوڑ کر میں کہاں جاؤں گی یہاں کی ایک ایک اینٹ میں میری یادیں ھیں میری جوانی میری زندگی میرے بچوں کا بچپن ایک ایک لمحہ آنکھیں بند کروں تو ماضی میرے سامنے آجاتا ھے ھم یہیں رھیں گے عمر اپنے نئے گھر میں چلا گیا آج میں بہت عرصے کے بعد آئینہ دیکھا میرے چہرے پہ ابھرنے والی سلوٹوں میں مجھے کئ روپ نظر آئے کئ نام نظر آئے بیٹی بہن بیوی بہو ماں خالہ چاچی تائی ممانی دیورانی جیٹھانی ایک ساس اور ان سب میں کہیں چھپی ھوئ ایک عورت جو اپنے فرض نبھاتے ھوئے کبھی میرے سامنے نہیں آئ تھی میں خود کیا تھی میری ذات کیا تھی میری خواہشیں میرے سپنے میری آزوئیں
ان سب رشتوں کے علاوہ میں کیا تھی میں ایک عورت تھی جو کمزور ھوتے ھوئے ایک نئے وجود کو تخلیق کرتی ھے اپنی خواھشوں کو مارتی ھے اپنے وجود کو بھول جاتی ھے کھڑکی سے برستی ھوئ بارش میں میں نے اپنے خالی گھر کو دیکھا یہ تو قانونِ قدرت ھے انسان دنیا میں اکیلا آیا ھے اس نے اکیلے ھی جانا ھے پرندے جب پرواز سیکھ لیتے ھیں تو کھلا آسمان ان کے سامنے ھوتا ھے انھیں تو اڑنا ھوتا ھے اپنے گھروندے بنانے ھوتے ھیں اپنے آشیانے کی آرزو سب کے دل میں ھوتی ھے میں نے کوئ انوکھا کام نہیں کیا تھا میں نے وھی کیا جو حوا سے لے کر اب تک ھر عورت کرتی آرھی ھے دنیا کی کروڑ ہا عورتوں کی طرح میں بھی ایک عورت ھوں ایک ماں
Haya 786 آف لائن ہے   Reply With Quote
8 قاری/قارئین نے Haya 786 کا شکریہ ادا کیا
فیصل ناصر (18-05-10), ھارون اعظم (18-05-10), راجہ اکرام (10-05-10), سحر (18-05-10), شاہ جی 90 (10-05-10), طلحہ (18-05-10), عبدالقدوس (10-05-10), عبداللہ آدم (18-05-10)
پرانا 10-05-10, 08:23 AM   #2
Senior Member
 
شاہ جی 90's Avatar
 
تاریخ شمولیت: Feb 2009
مقام: اٹک سٹی
عمر: 39
مراسلات: 4,847
کمائي: 99,311
شکریہ: 22,166
4,092 مراسلہ میں 10,852 بارشکریہ ادا کیا گیا
Default

کمال کی تحریر ہے اور اس تحریر کو پڑھ کر لگتا ہے کہ آپ خواتین کی ڈاکٹر شیر شاہ بن کر ابھر رہی ہیں
کیا خیال ہے
کیا آپ نے کبھی ڈاکٹر شیر شاہ کو پڑھا
شاہ جی 90 آف لائن ہے   Reply With Quote
شاہ جی 90 کا شکریہ ادا کیا گیا
فیصل ناصر (18-05-10)
پرانا 18-05-10, 03:33 PM   #3
Senior Member
 
عبداللہ آدم's Avatar
 
تاریخ شمولیت: Feb 2010
مقام: راولپنڈی
مراسلات: 6,542
کمائي: 109,342
شکریہ: 25,360
5,342 مراسلہ میں 15,778 بارشکریہ ادا کیا گیا
عبداللہ آدم کو Yahoo کے ذریعے پیغام ارسال کریں
Default

یہ کوں حضرت ہیں جناب شاہ جی؟؟؟؟؟؟؟؟؟؟؟
عبداللہ آدم آف لائن ہے   Reply With Quote
2 قاری/قارئین نے عبداللہ آدم کا شکریہ ادا کیا
فیصل ناصر (18-05-10), شاہ جی 90 (18-05-10)
پرانا 18-05-10, 08:53 PM   #4
Administrator

 
سحر's Avatar
 
تاریخ شمولیت: Nov 2008
مراسلات: 7,730
کمائي: 193,696
شکریہ: 9,531
6,651 مراسلہ میں 23,781 بارشکریہ ادا کیا گیا
Default

زندگی اسی کا نام ہے ۔
حیا آپ نے بہت اچھا لکھا ۔ لیکن بچوں کی پرورش میں اور ایک عورت کی زندگی میں اس کے شوہر کے کردار کا ذکر نہیں کیا ۔
شوہر اگر ساتھ دینے والا ہو تو عورت کبھی تنہا نہیں رہتی ۔
__________________
اے اللہ
میرے ہر فیصلے میں تیری رضا ہو شامل
جو تیرا حکم ہو وہ میرا ارادہ کردے
سحر آف لائن ہے   Reply With Quote
4 قاری/قارئین نے سحر کا شکریہ ادا کیا
فیصل ناصر (18-05-10), شاہ جی 90 (18-05-10), طلحہ (18-05-10), عبداللہ آدم (19-05-10)
پرانا 18-05-10, 08:53 PM   #5
Administrator

 
سحر's Avatar
 
تاریخ شمولیت: Nov 2008
مراسلات: 7,730
کمائي: 193,696
شکریہ: 9,531
6,651 مراسلہ میں 23,781 بارشکریہ ادا کیا گیا
Default

زندگی اسی کا نام ہے ۔
حیا آپ نے بہت اچھا لکھا ۔ لیکن بچوں کی پرورش میں اور ایک عورت کی زندگی میں اس کے شوہر کے کردار کا ذکر نہیں کیا ۔
شوہر اگر ساتھ دینے والا ہو تو عورت کبھی تنہا نہیں رہتی ۔
سحر آف لائن ہے   Reply With Quote
سحر کا شکریہ ادا کیا گیا
ھارون اعظم (18-05-10)
پرانا 18-05-10, 11:10 PM   #6
Senior Member
 
شاہ جی 90's Avatar
 
تاریخ شمولیت: Feb 2009
مقام: اٹک سٹی
عمر: 39
مراسلات: 4,847
کمائي: 99,311
شکریہ: 22,166
4,092 مراسلہ میں 10,852 بارشکریہ ادا کیا گیا
Default

اقتباس:
اصل مراسلہ منجانب : عبداللہ آدم مراسلہ دیکھیں
یہ کوں حضرت ہیں جناب شاہ جی؟؟؟؟؟؟؟؟؟؟؟
بھیا ڈاکٹر شیر شاہ سید ایک فیمینسٹ ہیں خواتین کی بہبود کے لیئے کام کرتے ہیں ساتھ ہی ایک بہت اچھے گائنی بھی ہیں
لیکن ان کی اصل شخصیت ان کی تحریروں میں جھلکتی ہے کبھی کبھی سسپینس ڈائجیسٹ میں لکھتے ہیں ۔
ہمارے پسندیدہ ترین لکھاریوں میں سے ہیں
شاہ جی 90 آف لائن ہے   Reply With Quote
شاہ جی 90 کا شکریہ ادا کیا گیا
جواب

Tags
فرض, پاکستان, پسند, نیند, چور, نظر, ماں, آئینہ, آج, انسان, بچپن, بچوں, تعلیم, حال, خوش, دوست, رات, زندگی, شہر, عورت, علی, عزیز, عزت, صاف, صرف


Currently Active Users Viewing This Thread: 1 (0 members and 1 guests)
 
موضوع کے اختیارات
ظاہری انداز Rate This Thread
Rate This Thread:


Similar Threads
موضوع موضوع شروع کیا فورم جوابات آخری مراسلہ
عوام کو مارتےہو اور وہ روئے بھی نہ۔۔۔۔ جب عوام بھوکے مرے گی تو تبدیلی کی آوازیں تو آئیں گی جاویداسد خبریں 2 21-09-10 08:12 PM
الطاف بھائی کا مارشل لاء کا مطالبہ اور عوام کی سوچ ۔ کیاعوام سیاستدانوں سے اکتا گئے ؟ جاویداسد خبریں 1 24-08-10 11:23 PM
عورت ۔ ۔ ۔ مرد کی زندگی میں عدنان دانی عمومی بحث 6 18-01-10 10:35 PM
اسلام میں عورت کا مقام رانا امر اسلام اور معاشرہ 0 18-11-09 04:08 PM
’عوامی نمائندے، عوامی مینڈیٹ کا احترام کریں‘ چاچا کمال خبریں 1 07-04-08 06:31 AM


تمام اوقات پاکستانی معیاری وقت ( +5 GMT) کے لحاظ سے ہیں۔ ابھی وقت ہے 07:10 AM

cpanel hosting 

Powered by vBulletin® Copyright ©2000 - 2014, Jelsoft Enterprises Ltd.
Content Relevant URLs by vBSEO
جملہ حقوق نشرو اشاعت ©2000 - 2014,پاکستان کی آواز - پاکستان کے فورمزکی انتظامیہ کے پاس مخفوظ ہیں۔ ہم اردو ترجمے کے لیے جناب زبیرکے مشکور ہیں-
اپنا بلاگ مفت حاصل کریں wordpress.pk
ہم pak.net ڈومین نیم کے لیے جناب فاروق سرور خان کے مشکور ہیں
vBCredits v1.4 Copyright ©2007 - 2008, PixelFX Studios
Ad Management plugin by RedTyger